عدالتی احکامات کے ساتھ کھیلنا آگ سے کھیلنے کے مترادف ہے: جسٹس گلزار

Category: News 123 0

عدالتی احکامات کے ساتھ کھیلنا آگ سے کھیلنے کے مترادف ہے: جسٹس گلزار
Daily Nawaiwaqt,Dated:16-04-2016
اسلام آباد (آن لائن) سپریم کورٹ نے عدالتی احکامات کی غلط تشریح کرنے پر توہین عدالت کیس کی فریق کو نوٹس موصول نہ ہونے پر سماعت دو ہفتوں کے لئے ملتوی کر دی اور مقدمہ کی فریق سیدہ سلطانہ کو دوبارہ نوٹس جاری کرنے کا حکم دے دیا جبکہ دوران جسٹس گلزار احمد نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ افسران نے سپریم کورٹ کے احکامات کے ساتھ کھیلا ہے۔ سپریم کورٹ کے احکامات کے ساتھ کھیلنا آگ کے ساتھ کھیلنے کے مترادف ہے۔ جمعہ کے روز کیس کی سماعت جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی۔ مقدمے کی کارروائی شروع ہوئی تو ضلع پشاور کے ڈپٹی کمشنر ریاض محمود ‘ اسسٹنٹ کمشنر الطاف احمد‘ تحصیل دار شوکت اقبال عدالت میں پیش ہوئے اور حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کی جس پر عدالت نے برہمی کا اظہار کیا اور جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیئے کہ تینوں افسران کو جیل بھیجا جائے گا۔ افسران نے سپریم کورٹ کے احکامات کے ساتھ کھیلا ہے۔ سپریم کورٹ کے احکامات کے ساتھ کھیلنا آگ کے ساتھ کھیلنے کے مترادف ہے۔ افسران کو ہتھکڑیاں بھی لگیں گی اور جائیدادیں بھی ضبط کرنے کا حکم دینگے۔ دریں اثناء عدالت نے مقدمہ کی فریق کو نوٹس موصول نہ ہونے پر کیس کی سماعت دو ہفتوں کے لئے ملتوی کر دی اور مقدمہ کی فریق سیدہ سلطانہ کو نوٹس جاری کرنے کا حکم دے دیا۔

Related Articles

Leave a Reply